peperonity.net
Welcome, guest. You are not logged in.
Log in or join for free!
 
Stay logged in
Forgot login details?

Login
Stay logged in

For free!
Get started!

Guestbook


kiyun karate ho meri shadi - Newest pictures
a--------urdu.duniya.in.peperonity.net

乂 کیوں کراتے ہو میری شادی ؟ 乂

اچھی خاصی گزر رہی تھی، کہ ہم شادی کی عمر کو آن پہنچے۔ ہم تہیہ کیے بیٹھے ہیں کہ کوئی بڑا کام کریں گے، شادی جیسے فروعی معاملات میں نہیں الجھیں گے،ویسے بھی کسی شخص کا عمر بھر کا ساتھ پاؤں میں پڑی زنجیر کے مترادف ہے۔

کوئی اونچی منزل حاصل کرنے کے لیے ذہنی یک سوئی کی ضرورت ہوتی ہے، جو بیوی کے ہوتے کم از کم نہیں ہو سکتی۔
ایک طویل عرصے تک آنے بہانے اس افتاد کو ٹالتے رہے، لیکن اب کی بار صورت حال کہیں گھمبیر دکھائی دیتی ہے۔

ویسے توہم خاصے نالائق واقع ہوئے ہیں،عمر رواں کی کئی بہاریں تو حصول علم میں گزار دیں۔
جو اماں ابا کی توجہ ہماری گزرتی عمر کی طرف دلاتا، وہ اسے شرمندگی اور ہمیں غصے سے دیکھ کر کہتے ’’ ابھی تو اس کی پڑھائی ہی مکمل نہیں ہوئی۔‘‘
یہ جملہ سننے کے بعد ہمیں شرمندگی ہوتی اور سوال کرنے والے کو غصہ آجاتا۔پوچھاجاتا، ’’آخر اور کتنا پڑھائیں گے اسے؟‘‘

ہنوز دلّی دور است، ہم دل ہی دل میں سوچتے اور اپنی غیر شادی شدہ زندگی میں مگن ہو جاتے۔ پھر وہ وقت آیا کہ ہمارے والدین کے صبر کا پیمانہ لبریزہوا، اور یونیورسٹی والوں کے صبر کا پیمانہ چھلک گیا۔ ہمیں کامیابی کا پروانہ تھما کر زندگانی کی جانب دھکیل دیاگیا۔ یہ وہ وقت تھا، جب نظریں ہم سے باتیں کرنے لگیں، کچھ نظریں کہتیں ’’بکرے کی ماں کب تک خیر منائے گی‘‘ کچھ کہتیں ’’ اب آیا نا اونٹ پہاڑ کے نیچے‘‘ اور کچھ نظریں سوالیہ ہوتیں ’’اب نہیں تو کب؟‘‘

عزیزوں رشتہ داروں کی گفتگو میں شاید ہمدردی ہی ہوتی ہے، لیکن ان کی باتیں نشتر بن کر ہمارے والدین کا جگر چھلنی کر دیتی ہیں۔منہ پھاڑ کر اکثر کیا جانے والا یہ سوال ملاحظہ فرمائیں ’’آپ کا بیٹا
بوڑھا ہو گیا،آخر کب کریں گے اس کی شادی؟‘‘

کہنے والا تو یہ بات مزے سے کہہ کر چلتا بنتا ہے، اور ہمارے والدین گھر آ کر تادیر ایک دوسرے پر الزام و دشنام کی بارش کرتے ہیں۔

ہر کوئی دوسرے کو اس تاخیر کا ذمہ دار قرار دیتا ہے۔ لڑائی طول پکڑتی ہے توکئی ایسے مردے بھی اکھاڑ لیے جاتے ہیں جنہیں بہت پہلے باہمی مشاورت سے دفنایا گیا تھا۔ ایک دوسرے کو نئے سرے سے الٹی میٹم دیے جاتے ہیں اور بلڈ پریشر معمول پر رکھنے والی گولیاں کھائی جاتی ہیں۔اور ہمیں ’’آر یا پار‘‘ والی نظروں سے دیکھا ...


This page:




Help/FAQ | Terms | Imprint
Home People Pictures Videos Sites Blogs Chat
Top
.