peperonity.net
Welcome, guest. You are not logged in.
Log in or join for free!
 
Stay logged in
Forgot login details?

Login
Stay logged in

For free!
Get started!

Guestbook


ibrat sara e dahar - Newest pictures
a--------urdu.duniya.in.peperonity.net

❃ عبرت سرائے دہر ❃

سچی کہانی

ان دنوں میں مدینہ منورہ میں مقیم تھا۔ عصر کی نماز پڑھی، مسجدِ نبویﷺ سے باہر نکلا اور شارع سِتیّن پر چل پڑا۔ گاڑی پارکنگ میں چھوڑ دی۔ بازار میں کاروباری رونق اپنے عروج پر تھی۔ میں دکانوں میں جھانکتا کشاں کشاں ایئر لائنز کے دفتر پہنچ گیا۔ یہی عالیشان دفتر میری منزل تھا۔

دروازے پر ہاتھ رکھا ہی تھا کہ مجھے احساس ہوا جیسے کوئی مجھے پکار رہا ہے۔ گھوم کر دیکھا تو ایک اجنبی کو مخاطب پایا۔ کون تھا وہ، میں نہیں جانتا، پہلی بار آمنا سامنا ہوا تھا۔ چند لمحے میں اس کی طرف دیکھا۔ درمیانہ قد، گٹھا ہوا جسم، سانولی رنگت، آنکھوں پر چشمہ مگر چہرے پر اکھڑ ڈھٹائی کا عنصر نمایاں۔
مجھے محوِ حیرت پا کر وہ شخص میرے قریب آ یا اور یوں گویا ہوا۔
’’صاحب، کیا آپ پاکستانی ہیں؟‘‘ وہ اعتماد رکھتا تھا کہ میں ’’ہاں‘‘ میں جواب دوں گا۔ میں نے سچ بول دیا۔اس میں حرج بھی کوئی نہیں تھا مگر جلد ہی احساس ہوا کہ میں کسی مشکل میں پھنس گیا ہوں۔
’’گاڑی ہو گی، آپ کے پاس؟‘‘ اس نے دوسرا سوال جڑ دیا۔’’جی ہاں۔‘‘ میں نے کچھ نہ سمجھتے ہوئے مختصر جواب دیا۔’’تو پھر آپ مجھے مدینہ شہر کی اہم زیارتیں کرا دیں۔‘‘ اس نے بلا جھجک کہہ دیا۔ میں تذبذب میں پڑگیا۔ مان نہ مان، میں تیرا مہمان! مجھے اجنبی کے رویے پر اچنبھا سا ہونے لگا۔ مجھے حیرت میں پا کر اس نے فرمائش دہرائی۔ اس دوران میں اپنے حواس مجتمع کر چکا تھا۔
’’آپ کا تعارف؟‘‘ مجھے پوچھنا پڑا۔ ’’عبدالقدیر۔‘‘ اس نے مصافحہ کرتے ہوئے جواب دیا۔اس نے مجھے بتایا کہ وہ پاکستان کے ایک بڑے ادارے میں راڈارٹیکنیشن تھا۔
پانچ سال قبل ریٹائرمنٹ لے کر خطۂ عرب آ گیا اب وہ کسی عرب شیخ کی مواصلاتی کمپنی میں بطور جونیئر افسر کام کر رہا تھا۔ ساتھ ہی اپنا چھوٹا موٹا کاروبار بھی کر لیتا تھا۔ ظہران میں مقیم تھا۔ حَاجات روائی کے لیے منورہ آیا تھا۔ مسجد نبویﷺ میں عبادت کرنا چاہتا تھا۔ بہرحال میں نے عبدالقدیر کی سیر و عبادت کا مناسب بندوبست کرا دیا۔

’’کیا میں آپ کے ہاں ٹھہر سکتا ہوں؟‘‘ عبدالقدیر نے مجھے اور بھی مشکل میں ڈال دیا۔خیر میں نے اس کی رہائش کا انتظام بھی کرا دیا۔ پھر اس وعدے کے ساتھ اسے خدا حافظ کہا کہ مغرب کے بعد وہ مجھے مسجدِ نبویﷺ میں ملے گا۔

مجھے ...


This page:




Help/FAQ | Terms | Imprint
Home People Pictures Videos Sites Blogs Chat
Top
.